Abu Dhabi wants to Invest US$45 Billion in Real Estate in Karachi in Partnership with Bahria Town


Abu Dhabi Group - Sheikh Nahayan bin Mubarak al-Nahayan  with Malik Riaz HussainJNN 22 Feb 2013 ABU DHABI – A member of Abu Dhabi’s royal family says he plans to spend $45 billion over up to 15 years on a real estate project in Karachi, touted in Pakistan as the country’s biggest ever foreign investment.

Sheikh Nahayan bin Mubarak al-Nahayan said the investment plans – which his business partner in Pakistan said on Friday included the tallest building in the world — were at a very early stage.

Sheikh Nahayan, chairman of conglomerate Abu Dhabi Group, said his privately-owned construction firm, Dhabi Contracting, had signed a memorandum of understanding with Pakistani real estate tycoon Malik Riaz Hussain to build residential properties on an island in Karachi.

“We have signed an MoU but a lot of studies will still have to be done,” he told Reuters on Sunday on the sidelines of a defense industry exhibition in the United Arab Emirates capital.

Nahayan, who is also the UAE’s minister for higher education, gave no details of how he would finance such huge developments, beyond saying it could be done through loans or cash.

“It will be in phases. Every phase will be studied by itself… It depends on the situation when we decide to go ahead with the projects.”

Abu Dhabi Group, which invests in emerging markets, already has large investments in Pakistan including Bank Alfalah, Warid Telecom, Al Razi Healthcare and Wateen Telecom.

A statement issued in Pakistan on Friday said the deal had the potential to transform the south of the country.

Karachi, the country’s commercial hub, is known for its violent crime, which claims about a dozen lives a day, the risk of being kidnapped and crumbling infrastructure.

The deal included plans to construct a miniature seven wonders of the world, the tallest building in the world, a sports city, an education and medical city, an international city and a media city, according to the press release.

Sheikh Nahayan said on Sunday that a final decision to build the world’s tallest tower had not been made, adding that developments would be mainly residential.

The tallest tower currently is the Burj Khalifa, built in Dubai at a cost of $1.5 billion.

 

Advertisements

One thought on “Abu Dhabi wants to Invest US$45 Billion in Real Estate in Karachi in Partnership with Bahria Town

  1. ……….ملک ریاض کی کامیابی کا راز

    ملک ریاض کون ہے یہ شاید کسی کو بتانے کی ضرورت نہیں۔مگر انکی کامیابی کا راز جاننا اور سمجھنا شاید ضروری نہ سہی مگر بہت سے لوگوں کی کامیابی کے لیے شاید ضروری ہے۔ملک ریاض ھمیشہ سے خبروں میں رہتے ہیں کبھی پاکستانیوں پر آنے والی کسی بھی مصیبت کی گھڑی میں کروڑوں روپے دینے کی خبریں تو کبھی حکومت اور کبھی اپوزیشن کی جانب سے آنے والے الزامات کی صورت میں اور ہر بار الزام ثابت نہیں ہو پاتے۔آخریہ سارے الزام لگتے اور ثابت کیوں نہیں ہوپاتے ؟ کچھ لوگوں کا خیال سے وہ لوگوں کو خرید لیتے ہیں تو کیا ایسا ممکن ہے کہ جن وزرا کے دستخطوں سے اربوں کھربوں یہاں سے وہاں ہوجاتے ہیں وہ ملک ریاض کی کروڑوں کی رشوت پے بک جائیں ؟ کبھی ملک ریاض حکومت کے دوست تو کبھی اپوزیشن کے دوست۔حکومت اور اپوزیشن میں موجود ارب پتی سیاستدانوں کو ملک ریاض کے پیسے کی ضرورت ہے نہ ہی اثررسوخ کی کہ سیاستدانوں کے پاس پیسے اور اثرورسوخ کی کمی نہیں ہوتی۔
    صومالی قزاقوں سے پاکستانیو کو چھڑانے کے لیے تاوان کی ادائیگی ہو یا شمالی علاقہ جات میں آنے والے زلزلے یا پنجاب سندہ میں انے والے سیلاب شمالی وزیرستان میں ہونے والے آپریشن کے متاثرین ہرجگہ سب سے پہلے سب سے زیادہ امداد کا اعلان کرنے والے کوئی اور نہیں ملک ریاض ہوتے ہیں
    اس وجہ سے ہی انکو بہت سارے اعزازات سے بھی دنیا نوازتی ہے اور انکے اپنے ملک میں ان پر بے جا تنقید بھی کی جاتی ہے جسے حال ہی میں انکو ایشیا کا بل گیٹس کا خطاب ملا کچھ لوگ سمجھتے ہیں کہ یہ اعزاز انکو انکی بے پناہ دولت کی وجہ سے دیا گیا مگر درحقیقت انکو یہ اعزاز بل گیٹس کی طرح انسانیت کے لے انکی بے پناہ خدمات پر دیا گیا شاید لوگ یہ بات نہیں جانتے کے پاکستان میں تین ہزار سے زائد لوگ ایسے ہیں جنکی ماہانہ آمدنی ایک کروڑ سے زیادہ ہے اور چار سو سے زیادہ افراد ارب اور کھرب پتی ہیں جن میں سے ۱۱۰ نمبر پر ملک ریاض کا نام آتا ہے مگر وہ تمام افراد چئیریٹی کے کاموں سے بہت دور ہیں کوئی ان میں سیاست کا کھلاڑی ہے اور کوئی عیاشی کا۔ملک ریاض چئیرٹی کے کھلاڑی بنے تو ان پر کچھ انکے مخالفین تنقید کرتے ہیں کہ یہ عوام کا پیسا ہے۔ان حضرات سے سوال ہے کیا انہوں کے کسی سے امداد کے نام پر پیسے لیے کبھی ؟ کسی سے فراڈ کرکے پیسے لیے ؟ کسی سے زبردستی پیسے لیے ؟ اگر عوام خود انکے پاس جاکر لائنوں میں لگ لگ کر بحریہ ٹاون کے پلاٹس خریدتی ہے تو اس میں ملک ریاض کا کیا قصور ہے ؟ پاکستان کو جن جن سیاستدانوں نے سرکاری افسران نے لوٹا ٹیکس چوری کرکے کھرب پتی بنے اور پھر وہ پاکستان پر آنے والی کسی بھی مصیبت میں کہیں نظر نہیں آتے ان پر تنقید کے بجائے ایک ایسے شخص پر تنقید کرتے ہیں جو نہ ٹیکس چور ہے نہ ملکی خزانہ لوٹنے والا نا ہی عوام کو بے وقوف بنا کر پیسے کمانے والا
    ملک ریاض کی کامیابیوں کے پیچھے
    شاید یا یقینا ایک بہت پرانا اور آزمودہ نسخہ ہے۔کہ جو آدمی اللہ کے بندوں پر مہربانی کرے اللہ اس پر اپنی مہربانی اور خزانے کے دروازے کھول دیتا ہے اور ملک ریاض کو جاننے والے اور میڈیا سے تعلق رکھنے والے لوگ یا باقائدہ اخبارات اور میڈیا دیکھنے والے لوگ اس بات کی گواہی دیں گے کہ جب بھی پاکستانیو پر کوئی آزمائش کی گھڑی آئی ملک ریاض سب سے پہلے لوگوں کی مدد کو آئے۔کیونکہ ملک ریاض کے بارے میں مشہور ہے کہ وہ کسی کو کبھی بھی انکار کردیتے ہیں مگر اللہ کے نام پر پھیلے ہاتھ کو انکار نہیں کرتے اور شاید یہ انکی کامیابی کا سب سے بڑا راز ہے

    سجاد شاہ
    فری لانس رائٹر
    ای بحریہ ٹاون

Leave a Reply

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s